لندن (ڈیلی پیغام)سماجی کارکن اور صحافی ریحام خان نے بالآخر اعتراف کرلیا کہ ان کی ممکنہ کتاب میں بلیک بیری کا ذکر ہے اور شایدبلیک بیری میں موجود معلومات کی وجہ سے تحریک انصاف کے رہنماءڈرے ہوئے ہیںجبکہ دوسری طرف یہ بھی دعویٰ کیاگیاکہ عمران خان کے بلیک بیری میں برطانیہ میں موجود وکلاءکو بھیجے گئے پیغامات موجود ہیں جوانہوں نے ممکنہ طلاق کی صورت میں قانونی نکات کا جائزہ لینے کے لیے بھیجے تھے ۔ جیونیوز سے خصوصی گفتگو کرتے ہوئے ریحام خان نے بتایاکہ کتاب میں بلیک بیری کا کافی تفصیل سے ذکر ہے ، فوری طورپر تمام چیزیں بتائی نہیں جاسکتیں تاہم کتاب میں اس پر کافی تفصیل سے لکھاگیا۔  جیونیوز کے مطابق طلاق کے بعد سے موبائل ڈیوائس کے حوالے سے باتیں چل رہی تھیں لیکن اب پہلی بار ریحام خان نے اس بلیک بیری کا اعتراف کیا ہے اور وہ آنیوالی ان کی کتاب کا ممکنہ طورپر حصہ ہے ، سکرپٹ دیکھنے والے تحریک انصاف کے اور ریحام خان کے قریبی ذرائع نے بتایاکہ موبائل فون ڈیوائس طلاق سے ایک دن قبل لندن آتے ہوئے ریحام خان اپنے ساتھ لے آئی تھیںجویہاں انہوں نے اپنی کسی دوست یا انشورنس کمپنی کے پاس رکھا ہے تاہم وہ ڈیوائس برطانیہ میں ہی اس وقت موجود ہے ۔ نمائندے کے مطابق علیحدگی سے دوماہ قبل ریحام خان کو پتہ چلا کہ عمران خان کے برطانیہ میں رابطے ہورہے ہیں اور وہ قانونی پہلوﺅں پر مشاورت کررہے ہیںکہ علیحدگی کی صورت میں برطانوی قانون کے مطابق ان پر کیا اثر ہوگا جس پر انہیں قانونی ہدایات ملیں، حیران کن طورپر جب یہ ساری معلومات عمران خان کیساتھ شیئرہورہی تھیں تو ریحام خان کو پہلے ہی اس سے آگاہی حاصل تھیں کہ شادی کرائسزا کا شکار ہے اور کچھ بھی ہوسکتاہے ، بعض ذرائع کے مطابق اس میں گیگنگ آرڈر کا بھی ذکر موجود ہے ۔ ذرائع نے یہ بھی تصدیق کی کہ موجود ڈیوائس میں کافی ڈیٹا موجود ہے ۔

Please follow and like us: