واشنگٹن(ڈیلی پیغام)امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے مقبوضہ کشمیر کی ‘خطرناک’ صورتحال پر ایک مرتبہ پھر ثالثی کی پیش کش کردی۔ صحافیوں سے بات چیت میں ڈونلڈ ٹرمپ نے کہا کہ پاکستان اور بھارت کے درمیان کشمیر دیرینہ، پیچیدہ اور حل طلب مسئلہ ہے اور ہم پاکستانی اور بھارتی قیادت سے رابطے میں ہیں۔

انہوں نے کہا کہ وہ آئندہ ہفتے بھارتی وزیراعظم نریندر مودی کے ساتھ اس معاملے کو اٹھائیں گے۔ساتھ ہی امریکی صدر کا یہ بھی کہنا تھا کہ ‘کشمیر ایک بہت پیچیدہ جگہ ہے، آپ کے پاس ہندو ہیں اور آپ کے پاس مسلمان ہیں لیکن میں یہ نہیں کہوں گا کہ وہ ایک ساتھ اچھے سے ہیں’۔انہوں نے مزید کہا کہ ‘میں ثالثی کے لیے اپنی بھرپور کوشش کروں گا’۔

خیال رہے کہ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے حالیہ دنوں میں وزیراعظم عمران خان اور بھارتی وزیراعظم نریندر مودی سے بات چیت کی تھی اور دونوں فریقین پر کشمیر میں کشیدگی کم کرنے پر زور دیا تھا۔

دوسری جانب امریکی اسٹیٹ ڈپارٹمنٹ کی جانب سے بھارت سے مطالبہ کیا گیا کہ وہ خطے میں کشیدگی کو کم کرنے کے لیے مقبوضہ کشمیر میں بنیادی آزادی کو بحال اور گرفتار افراد کو فوری رہا کرے۔

اسٹیٹ ڈپارٹمنٹ کے اسیک سینئر حکام نے صحافیوں کو بتایا کہ ‘ہمیں اس علاقے کے رہائشیوں پر مستقل پابندیوں اور حراست میں لیے جانے کی رپورٹس پر مسلسل تشویش ہے’۔

اس علاقے کے دورے کے بعد واپس آنے والے عہدیدار نے نام ظاہر نہ کرنے کی شرط پر کہا کہ ‘ہم انفرادی حقوق کے احترام، قانونی طریقہ کار کی تعمیل اور ایک جامع مذاکرات پر زور دیتے ہیں’۔

امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے نریندر مودی کو مقبوضہ کشمیر میں کرفیو فوری ختم کرنے کا حکم دے دیا، سینئر صحافی روف کلاسرا کا دعویٰ ہے کہ وزیراعظم ہاوس سے موصول ہونے والی تفصیلات کے مطابق ٹرمپ نے عمران خان کو بتایا ہے کہ انہوں نے بھارتی وزیراعظم کو ہدایت کی کہ کشمیر میں نافذ کرفیو ختم کیا جائے۔

تفصیلات کے مطابق سینئر صحافی و تجزیہ کار روف کلاسرا کی جانب سے نجی ٹی وی چینل کے پروگرام سے گفتگو کرتے ہوئے بتایا گیا ہے کہ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے بھارتی وزیراعظم نریندر مودی کو واضح الفاظ میں ہدایت کی ہے کہ مقبوضہ کشمیر میں کرفیو ختم کیا جائے۔ روف کلاسرا نے بتایا ہے کہ انہیں یہ خبر وزیراعظم ہاوس کے ذرائع سے موصول ہوئی ہے۔

وزیراعظم ہاوس کے ذرائع نے بتایا ہے کہ وزیراعظم عمران خان نے اپنی کابینہ کے اراکین کو بتایا ہے کہ گزشتہ روز امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے ان سے ٹیلی فونک رابطہ کیا اور بتایا کہ انہوں نے بھارتی وزیراعظم نریندر مودی کو واضح الفاظ میں ہدایت کر دی ہے کہ مقبوضہ کشمیر میں انسانی حقوق کی خلاف ورزیاں بند کی جائیں اور 5 اگست سے نافذ کرفیو فوری ختم کیا جائے۔

Please follow and like us:
error