برسلز(ڈیلی پیغام ) سفارتخانہ پاکستان برسلز کی جانب سے عالمی یوم امن کے حوالہ سے یورپی پریس کلب برسلز میں مقبوضہ کشمیر میں بھارتی اقدامات کے علاقائی اور بین الاقوامی امن پر مضمرات کے عنوان سے کانفرنس کا انعقاد کیا گیا۔ جس میں ہر شعبہ ہائے زندگی سے تعلق رکھنے والے افراد کی ایک کثیر تعداد نے شرکت کی اس کانفرنس سے سفیر پاکستان بلجئیم، لگسمبرگ و یورپین یونین ظہیر اسلم جنجوعہ اور بلجئین سینیٹر ممباکا برٹن، خاتون صحافی انیتا بولاندی اور سٹوڈنٹ لیڈر وم کنیپن نے بھی خطاب کیا، سفیر پاکستان ظہیراسلم جنجوعہ نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ مسئلہ کشمیر کا واحد حل اقوام متحدہ کی قرادادوں پرعملدرآمد ہے۔ سفیر پاکستان نے مزید کہا کہ کشمیر میں پانچ اگست کو بھارت کی طرف سے کئے جانے والے یکطرفہ اقدامات اور اس کے ساتھ مظلوم کشمیریوں کی آواز کو دبانے کے لئے ڈھائے جانے والے مظالم خطے کے امن اور سلامتی کے لئے شدید خطرہ ہیں ۔ سفیر پاکستان نے مزید کہا کہ اس قسم کے اقدامات اقوام متحدہ کی سیکورٹی کونسل کی قرار دادوں کی کھلی خلاف ورزی ہیں – کیونکہ جموں و کشمیر کی متنازعہ حیثیت اقوام متحدہ کے ایجنڈے پر گزشتہ ستّر سالوں سے موجود ہے – انہوں نے مزید کہا کہ گزشتہ ماہ سولہ اگست کو ہونے والی سیکورٹی کونسل کی میٹنگ میں مسلہ کشمیر کی عالمی سطح پر متنازعہ حیثیت کو ایک بار پھر تسلیم کیا جا چکا ہے۔ سفیر پاکستان نے جموں و کشمیر میں ڈھاے جانے والے مظالم بشمول ممنوعہ کلسٹربم کے استعمال ‘ بیگناہ لوگوں کو بڑی تعداد میں حراست میں لئے جانا اور دس لاکھ کے قریب بھارتی فوج کی مقبوضہ جموں و کشمیر میں موجودگی کا ذکر کرتے ہوۓ اس بات پر زور دیا کہ بھارت پانچ اگست کو لئے گئے یکطرفہ اقدامات کو واپس لے۔ اور فوری کرفیو کو اٹھا کر عام لوگوں پر سے پابندیاں ختم کرے – اور اقوام متحدہ کے ہیومن رائٹس کمیشن کی سفارشات پر عمل کرتے ہوۓ آزادانہ انکوائری کمیشن کو تحقیقات کی اجازت دے۔

Please follow and like us:
error