عزم و ہمت ٬جدوجہد اور ایمانداری کی داستان(ملک محمد اجمل )پاکستان سے یورپ تک

تحریر و ترتیب مرزا عمران بیگ (برسلز ) بلجیم

ملک محمد اجمل یورپ کے کاروباری ٬ سیاسی اور سماجی حلقوں میں کسی تعارف کے محتاج نہیں آپ بلجیم کے شہر اینورپن کے نامور بزنس مین ہیں اپنی سیاسی اور سماجی سرگرمیوں کی وجہ سے اپنے علاقے کی بڑی پاپولر شخصیت ہیں پاکستان پیپلز پارٹی یورپ کے مرکزی رہنما ہیں اور بلجیم میں پیپلز پارٹی کے بانیان میں شمار ہوتے ہیں شہید محترمہ بے نظیر بھٹو کے ساتھ یادگار ملاقاتیں رہی ہیں ۔

ملک محمد اجمل کا تعلق پاکستان کے معروف شہر سرائے عالمگیر سے ہے آپ 1990 ءمیں پاکستان سے یورپ آئے اور بیلجیئم میں اپنے کاروبار کا آغاز کیا اور اپنے حسن اخلاق کی بدولت بہت جلد علاقے کی مقبول شخصیت بن گئے۔


ایک ملاقات میں ملک اجمل نے اپنی کامیابی کی داستان سناتے ہوئے کہا کہ شروع شروع میں مشکلات بہت آئیں کام کاج اور روزگار کے مسائل تھے مگر آہستہ آہستہ حالات سازگار ہوتے گئے انہوں نے کہا کہ کامیابی کے لئے عزم ‘ہمت اور ایمانداری ایسے اصول ہیں کہ ان کو دنیا میں جو بھی اپنائے گا کامیابی اس کا مقدر بنے گی اور میری کامیابی بھی انہی اصولوں اور ضوابط پر عمل پیرا ہونے سے ہے ملک کی سیاسی صورت حال کے بارے میں بات کرتے ہوئے ملک محمد اجمل نے کہا کہ تحریک انصاف کی حکومت نے ملک کو ایک ایسی دلدل میں دھکیل دیا ہے کہ جس سے باہر کا کوئی راستہ دکھائی نہیں دے رہا احتساب کے نام پر ملک میں بدترین انتقام کا نظام چل رہا ہے عمران خان کے آس پاس سب کرپٹ لوگ ہیں مگر ان کو نظر انداز کر کے صرف اور صرف اپوزیشن سے وابستہ لوگوں کے خلاف کیس بنائے جا رہے ہیں اس کی ہم پرزور مذمت کرتے ہیں مسئلہ کشمیر کے حوالے سے

ایک سوال کے جواب میں انہوں نے بتایا کہ یہ حقیقت ہے کہ اس وقت کشمیر ایک ایسا آتش فشاں بن چکا ہے جو کسی وقت بھی پھٹ سکتا ہے دنیا کے امن کے لئے کشمیر کا پرامن اور کشمیریوں کے لئے قابل قبول حل بہت ضروری ہے انڈیا نے کشمیر کی خود مختار حیثیت ختم کر کے کشمیرکی آزادی کا راستہ ہموار کر دیا ہے‘اب کشمیر کو آزاد ہونے سے کوئی نہیں روک سکتا یہ مسئلہ اب ایک عالمی ایشو بن چکا ہے یورپی پارلیمنٹ اور یو این او سمیت عالمی برادری نے مودی حکومت کی ہٹ دھرمی اور ظالمانہ اقدامات کو ہر لحاظ سے مذمت کی ہے انسانی حقوق کی شدید خلاف ورزیوں پر پوری دنیا انڈین حکومت پر دباﺅ ڈال رہی ہے کہ اپنی فوجیں واپس بلا کر واد ی کا امن بحال کیا جائے ۔

ایک سوال کے جواب میں ملک اجمل نے کہا کہ عدلیہ اور الیکشن کمیشن پر کسی قسم کا دباﺅ نہیں ہونا چاہئے تا کہ ملک میں انصاف کی فراہمی میں کوئی روکاوٹ نہ آئے مگر بدقسمتی سے ہمارے ہاں اس کے برعکس ہے ملک سنوارو مہم اور ڈیم بناﺅ مہم میں ایک خطیر رقم اکٹھی ہوئی تھی مگر آج تک اس کا کچھ پتا نہیں چلا اس قسم کے واقعات اوور سیز پاکستانیوں کو پریشان کرتے ہیں کمیونٹی کے نام اپنے پیغام میں ملک محمد اجمل نے کہا کہ ہم اوور سیز پاکستانی بلاشبہ ملک کے غیر سرکاری سفیر ہیں ہمیں ایسا کام کرنے سے گریز کرنا چائے جس سے ملک و قوم کے وقار پر حرف آتا ہو ملک کی معیشت کی بہتری کے لئے پاکستان رقم قانونی طریقے سے بھجوائیں اس سے ہماری معیشت بھی بہتر ہو گی اور ساکھ بھی اچھی ہو گی ۔

Please follow and like us: