روسی فیڈرل بایومیڈیکل ایجنسی نے دعویٰ کیا ہے کہ اس نے ملیریا کےخلاف ایک دوا میں مزید اینٹی بایوٹکس شامل کرکے کووڈ 19 کے علاج میں کامیابی حاصل کی ہے۔ فوٹو: رائٹرز

 ماسکو: روس نے کورونا وائرس سے پھیلنے والی بیماری کووڈ19 کے لیے ایک مؤثر دوا تیار کرنے کا دعویٰ کیا ہے۔

روسی حکام نے ملیریا کے خلاف عام استعمال ہونے والی ایک مؤثر دوا، میفلوکوائن کو بعض مریضوں پرآزمایا گیا ہے جس نے نہ صرف اندرونی جلن و سوزش کو کم کیا ہے بلکہ یہ جسم کے اندر وائرس کو مزید بڑھنے سے بھی روکتی ہے۔

روسی کی فیڈرل بایومیڈیکل ایجنسی کے مطابق اس دوا کے حوصلہ افزا نتائج برآمد ہوئے ہیں۔ ایجنسی کی سربراہ ویرونِکا سووروسکا نے اپنے ایک بیان میں کہا ہے کہ میفلوکوائن کو تقویت دینے کے لیے اینٹی بایوٹکس بھی ملائی گئی ہیں۔ اس سے خون کے پلازما اور پھیپھڑوں میں اینٹی وائرل ایجنٹس کی تعداد بڑھتے ہوئے دیکھی گئی ہے۔

’ اس سے کئی اقسام کی شدتوں والے کورونا وائرس سے متاثرہ مریضوں کا علاج کیا گیا ہے،‘ ویرونِکا نے کہا۔

اس سے قبل روسی حکومت نے کورونا وائرس سے متاثر ہونے والے 228 نئے مریضوں کا اعتراف کیا جس کے بعد پورے ملک میں مریضوں کی کل تعداد 1264 ہوگئی ہے۔ اب تک چھ افراد لقمہ اجل بن چکے ہیں جبکہ 49 افراد صحت یاب ہوئے ہیں۔

روس نے وائرس کے پھیلاؤ کو مزید روکنے کے لیے غیرملکیوں کی آمد اور بیرونِ ملک پروازوں پر مکمل پابندی عائد کردی ہے۔

چین کے شہر ووہان سے نمودار ہونے والے کورونا وائرس سے اب تک دنیا کے 200 ممالک متاثر ہوئے ہیں۔ مریضوں کی تعداد چھ لاکھ سےزائد ہے جبکہ ہلاکتوں کی تعداد 28 ہزار سے زائد ہوچکی ہے۔

Please follow and like us: